اسرائیلی درندہ فوج کا ابتک کا بڑا نقصان

وَمَكَرُواْ وَمَكَرَ ٱللَّهُ – وَٱللَّهُ خَيْرُ ٱلْمَٰكِرِينَ

اسرائیل کا ابتک 21 یہودی فوجیوں کی ہلاکت کا اعتراف، اسرائیلی حکومت

واقعے میں 50 سے زائد یہودی فوجی جہنم واصل، مجاہدین کا دعویٰ

کراچی ( رپورٹ : جاوید صدیقی ) اسرائیلی درندہ فوج کا ابتک کا بڑا نقصان گزشتہ روز غزہ کا علاقہ مغازی میں پیش آیا، جہاں اسرائیلی فوج نے دو عمارتوں کے اطراف میں خطرناک بارودی بم بچھانا شروع کر رکھے تھے، اسرائیلی فوج نے ان عمارتوں کو دھماکوں سے اڑانے کا پلان بنایا تھا۔ ان عمارتوں کے قریب ایک یہودی ٹینک مرکافا کھڑا تھا جو حفاظت پر مامور تھا، مجاہدین نے دور سے اس ٹینک کو دیکھا تو اس کو تباہ کرنے کا پلان بنایا،

مجاہدین نہیں جانتے تھے کہ اس جگہ پر یہودی فوجی بارودی بم لگا کر عمارتوں کو تباہ کرنا چاہتے ہیں، مجاہدین نے ایک اسرائیلی ٹینک پر حملہ کردیا، مجاہدین کا میزائل جیسے ہی ٹینک کو لگا تو اس میں سوار یہودی فوجیوں کو بچانے کیلئے مزید یہودی فوجی آئے، مجاہدین نے ان پر بھی حملہ کردیا اور انہیں آگے بڑھنے سے روکا۔

اس دوران اسرائیلی فوجی ہیلی کاپٹر آئے اور انہوں نے مجاہدین سمجھ کر میزائل برسا دیئے جس میں سے کچھ میزائل ان بارود سے بھری عمارتوں پر جا لگنے سے زوردار دھماکے ہوئے اور وہ ٹینک اور عمارتیں مکمل طور پر تباہ ہوگئیں۔ تیسری عمارت زمین بوس ہوگئی، جتنے یہودی ان عمارتوں میں تھے سب جہنم واصل ہوگئے،

اسرائیل نے ابتک اکیس یہودی فوجیوں کی ہلاکت کا اعتراف کیا ہے۔ اس واقعے کو اسرائیل ابتک کا سب سے بڑا نقصان بتا رہا ہے، جب کہ مجاہدین کے مطابق اس واقعے میں پچاس سے زائد یہودی فوجی جہنم واصل ہوئے ہیں، مجاہدین کے مطابق یہ اللہ کی غیبی مدد تھی جو ہمیں ملی ہے،

ایسی مدد اس سے پہلے بھی ملتی رہی ہے۔ ایک وہ سازش یا چال ہے جو دشمن اختیار کرتا ہے اور ایک اللہ تعالیٰ کی تدبیر ہے جو دشمنوں کی چالوں پر بھاری رہتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top